امیگریشن کے مسائل اور PWCS—اہل خانہ کے خدشات سے بچنے کی معلومات

پرنس ولیئم کاونٹی پبلک سکولز کے بہت سے طلباء اور ان کے اہل خانہ نے امریکی امیگریشن کی پالیسی اور اس کے نفاذ پر جاری بحث کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا ہے۔ براہ مہربانی آگاہ رہیئے کہ بدلتی ہوئی سیاسی بحث کے باوجود، سکول ڈویژن کی پالیسیاں اور طریقہ کار جوں کے توں رہیں گے۔

اس میں ڈرنے کی کوئی بات نہیں کہ پرنس ولیئم کاونٹی پبلک سکولز نسل، رنگ یا قومیت کی بنیاد پر تمام طلباء، سٹاف، اور کمیونٹی کے اراکین کے تحفظ اور ذہنی سکون کو فراہم کرنے میں کوئی کمی کرے گی یا تمام طلباء کو ان کے امیگریشن کی حیثیت کی وجہ سے تعلیم دینے میں کمی کرے گی۔

  • PWCS سب کو معیاری تعلیم اور خوش آئند ماحول فراہم کرنے کے عزم پر کاربند ہے۔

 ماضی کی طرح جب طلباء اور ان کے اہل خانہ کی قانونی حیثیت سخت تشویش کا موضوع تھے، سکول ڈویژن نسل، رنگ یا قومیت کی بنیاد پر امتیازی سلوک کی ممانعت کی اپنی پالیسیوں اور ضوابط پر عمل کرے گا۔ یہ 1982 کے سپریم کورٹ کے فیصلے کی عکاسی کرتا ہے کہ تمام طلباء کو ان کی امیگریشن کی حیثیت سے قطع نظر تعلیم فراہم کی جائے گی۔ 

  • ہم امیگریشن سے متعلقہ سخت نفاذ کی اپنے سکولوں میں توقع نہیں کرتے۔

ہم ایسی کسی کوشش سے آگاہ نہیں ہیں جس میں امیگریشن اور کسٹم کے نفاذ کی ایجنسی (ICE) یا مقامی قانون نافذ کرنے والے حکام نے پبلک سکول میں داخل ہو کر طلباء، والدین یا سٹاف کو حراست میں لیا ہو یا گرفتار کیا ہو اور نہ ہی ایسا ہونے کی کوئی وجہ ہے۔  ICE نے سکولوں کو "حساس مقامات" کے طور پر بہت دور گردانا ہے جہاں امیگریشن نافذ کرنے والی کاروائیاں اسی صورت میں ہوں گی جب ان جگہوں پر دہشت گردی، تشدد کے خطرات، قومی سلامتی کو خطرہ، یا دیگر انتہائی مخصوص خطرات ہوں گے۔ ہم ICE سے اس پالیسی پر عمل کرنے کی توقع کرتے ہیں۔

  • ہمیشہ کی طرح، PWCS ہمارے سکولوں میں تمام طلباء اور سٹاف کے قانونی حقوق کا تحفظ کرے گا۔

اگر ICE اور دیگر قانون نافذ کرنے والے حکام سکولوں تک رسائی چاہتے ہیں؛ PWCS چاہے گا کہ وہ وارنٹ، سمن یا کوئی اور قانونی جواز پیش کریں، اور PWCS کی منظوری کا انتظار کریں تاکہ ہمارے طلباء اور سٹاف اراکین کے حقوق کو یقینی بنایا جا سکے۔ 

  • PWCS امیگریشن کی حیثیت کے بارے میں نہیں پوچھتا اور مناسب قانونی جواز کے بغیر طالبعلم/طالبہ کی معلومات نہیں بانٹتا۔ 

PWCS طلباء اور ان کے اہل خانہ کے امیگریشن کی حیثیت کے بارے میں کبھی نہیں پوچھتا کیونکہ تمام طلباء کو تعلیم دینے کے عزم پر یہ حیثیت کوئی اثر نہیں ڈالتی۔ مزید برآں، PWCS مناسب سمن یا قانونی احکام کے بغیر قانون نافذ کرنے والے حکام کو طالبعلم/طالبہ کی خفیہ معلومات/ریکارڈ جاری نہیں کرے گا۔ 

اگر آپ اہل خانہ کے کسی فرد کے امیگریشن کی حیثیت کے متعلقہ مسائل سے پریشان ہیں تو تسلی کیجیئے کہ PWCS کے پاس تازہ ترین ہنگامی رابطے کی معلومات ہوں۔ کسی بھی ایسی صورت حال پیدا ہونے کی صورت میں یہ سکول ڈویژن کو آپ کے نامزد کردہ افراد تک پہنچنے میں مدد کرے گا۔