کتاب: پالیسیاں اور ضوابط

سیکشن: ضابطہ - طالبعلم/طالبہ کا انتشاری رویہ - جسمانی بندش اور تنہائی کا استعمال
کوڈ 1-746
حیثیت: فعال
اختیار کردہ: 27 مارچ، 2019
آخری نظر ثانی شدہ: 24 فروری، 2022

طلباء

ضابطہ 1-746

طالبعلم/طالبہ کا انتشاری رویہ - جسمانی بندش اور تنہائی کا استعمال

يہ ضابطہ جسمانی مداخلت، جسمانی بندش، تنہائی کی تکنيک کے استعمال کی ہدايات فراہم کرتا ہے سکول کا عملہ ہنگامی صورتوں ميں طالبعلم/طالبہ کے جارحانہ يا پرتشدد سلوک کا جواب دے سکيں اور اس کو قابو ميں کر سکيں۔ اس ضابطے کے سيکشن IV ميں اس قسم کی مداخلتوں کی اطلاع دينے کے عمل کئے جانے والے طريقہ کار اورطالبعلم/طالبہ کے والدين/سرپرستوں کو اطلاع کی فراہمی شامل ہے۔

  1. تعریفیں

    "جسمانی مداخلت" کی تعریف اسکول کے عملے کے ذریعہ ترتیب اور کنٹرول کو برقرار رکھنے کے لیے مناسب اور ضروری جسمانی رابطے کے استعمال کے طور پر کی گئی ہے۔ خلل کو روکنا؛ طالبعلم، خود کو، اور دوسروں کو جسمانی چوٹ کے خطرے سے بچانا؛ جائیداد کو پہنچنے والے نقصان کو روکنا جب اس سے سنگین جسمانی نقصان یا چوٹ کا خطرہ پیدا ہوتا ہے۔ یا ہتھیار، خطرناک اشیاء، یا سامان کا قبضہ حاصل کرنا۔ جسمانی مداخلت کو سکول بورڈ پاليسی 741 اور ضابطہ 1-741 "جسمانی سزا" کے مطابق نافذ کرنا ہو گا، جو اس بات کو بيان کرتی ہے کہ اساتذہ/سکول عملہ جسمانی سزا ("نظم و ضبط کا ايک ذريعے کے طور پر طالبعلم/طالبہ کو جسمانی تکليف پہنچانا يا اس کا سبب بننا") کو استعمال نہيں کر سکتے ہيں، ليکن ايسا کر سکتے ہيں:
    1. تنظیم اور کنٹرول برقرار رکھنے کے لیے حادثاتی، معمولی یا مناسب جسمانی چھونا یا کی گئی دیگر کاروائیاں؛
    2. پریشانی والی صورتحال کو ختم کرنے یا ایک طالبعلم/طالبہ کو پریشانی والے منظر سے ہٹانے کیلیئے مناسب یا ضروری طاقت جو افراد کو جسمانی چوٹ یا املاک کو نقصان پہنچانے کی دھمکی دے؛
    3. ایک طالبعلم/طالبہ کو اپنے آپ کو جسمانی نقصان پہنچانے سے بچانے کیلیئے مناسب یا ضروری طاقت؛
    4. اپنے دفاع یا دوسروں کے دفاع کیلیئے مناسب اور ضروری طاقت؛ اور
    5. ہتھیاروں یا دیگر خطرناک اشیا یا منضبط مواد یا اس جیسی لگنے والی اشیاء کا قبضہ لینے کیلیئے مناسب اور ضروری طاقت جو طالبعلم/طالبہ کے پاس یا اس کے اختیار میں ہے۔
    "جسمانی رکاوٹ" کا مطلب دوسروں کو جسمانی نقصان پہنچانے کے خطرہ سے دو چار کرنے والے رويہ سے باز رکھنے کے لئے کسی فرد کی انفرادی آزادی يا جسمانی حرکت کو محدود کرنے يا کسی طالبعلم/طالبہ کو اپنے جسم کو حرکت کرنے سے باز رکھنے کے لئے کسی جسمانی طريقہ کار کا استعمال ہے۔ جسمانی رکاوٹ ميں درج ذيل شامل نہيں ہيں:
    1. کسی طالبعلم/طالبہ کو خاموش کرانے يا آرام پہنچانے کے لئے تھوڑی دير کسی طالبعلم/طالبہ کو پکڑنا؛
    2. کسی طالبعلم/طالبہ کو محفوظ طور پر ايک مقام سے دوسرے مقام تک لے جانے طالبعلم/طالبہ کا ہاتھ یا بازو پکڑنا؛ یا
    3. تنظیم اور کنٹرول برقرار رکھنے کے لیے حادثاتی، معمولی یا مناسب جسمانی چھونا یا کی گئی دیگر کاروائیوں کا استعمال۔
    جسمانی رکاوٹ میں طلباء اور عملہ کو درپيش کسی ممکنہ خطرے کو کم کرنے کے لئے وضع کردہ منظور شدہ طريقہ کار کا اس طريقہ کے ماہر اشخاص کے ذريعہ استعمال شامل ہو سکتا ہے۔

    "پابندی" کا مطلب ہے مکینیکل پابندی، جسمانی پابندی، یا فارماسولوجیکل پابندی۔

    "مکینیکل پابندی" کا مطلب طالبعلم کی نقل و حرکت کی آزادی کو محدود کرنے کے لیے کسی بھی مواد، ڈیوائس یا آلات کا استعمال ہے۔ اس میں تربیت یافتہ سکول کے عملے کے ذریعہ لاگو کیا گیا یا کسی طالبعلم کے ذریعہ استعمال کیا جانے والا آلہ شامل نہیں ہے جسے کسی مناسب طبی یا متعلقہ سروس پروفیشنل نے تجویز کیا ہو۔

    "فارماکولوجیکل پابندی" کا مطلب ہے ایک طالبعلم پر رویے کو کنٹرول کرنے یا نقل و حرکت کی آزادی کو محدود کرنے کے لیے استعمال ہونے والی دوائی۔

    "جسمانی پابندی" کا مطلب ہے ایک ذاتی پابندی جو طالبعلم کی آزادانہ نقل و حرکت کی صلاحیت کو متحرک یا کم کر دیتی ہے۔

    اصطلاح "جسمانی پابندی" میں درج ذیل شامل نہیں ہے:
    1. کسی طالبعلم/طالبہ کو خاموش کرانے يا آرام پہنچانے کے لئے تھوڑی دير کسی طالبعلم/طالبہ کو پکڑنا؛
    2. کسی طالبعلم/طالبہ کو محفوظ طور پر ايک مقام سے دوسرے مقام تک لے جانے طالبعلم/طالبہ کا ہاتھ یا بازو پکڑنا; یا
    3. تنظیم اور کنٹرول برقرار رکھنے کے لیے حادثاتی، معمولی یا مناسب جسمانی چھونا یا کی گئی دیگر کاروائیوں کا استعمال۔
    "تنہائی" کا مطلب کسی طالبعلم/طالبہ کو ايک کمرے ميں اکيلا قيد کرنا جہاں سے طالبعلم/طالبہ کو جسمانی طور پر باہر نکلنے ميں پابندی عائد ہو۔ اس میں درج ذیل شامل نہیں ہے:
    1. ٹائم آؤٹ؛
    2. سکول کے اندر معطلی؛
    3. طالبعلم کی طرف سے وقفے کی درخواست؛
    4. استاد کی طرف سے خلل ڈالنے والے رویے پر کلاس روم سے ہٹانا (ورجینیا کوڈ 276.2-22.1
    5. اکیلے طالبعلم کی قید؛ یا
    6. تنظیم اور کنٹرول برقرار رکھنے کیلیئے حادثاتی، معمولی یا مناسب جسمانی چھونا یا کی گئی دیگر کاروائیوں کا استعمال۔
    "ٹائم آوٹ" کا مطلب کسی طالبعلم/طالبہ کو اپنے آپ پر قابو پانے ميں مدد کرنے کے لئے اس کو پُر سکون کرنے يا اس کے رويہ ميں کمی لانے کے لئے فوری ماحول سے نکال کرايک مختلف، کھلے مقام پر لے جانا ہے۔ "ٹائم آؤٹ" کا مطلب ایک طرز عمل کی مداخلت ہے جس میں طالبعلم کو عارضی طور پر سیکھنے کی سرگرمی سے ہٹا دیا جاتا ہے لیکن جس میں طالبعلم کو قید نہیں کیا جاتا ہے۔
  2. جسمانی مداخلت، جسمانی رکاوٹ يا تنہائی کے استعمال کے اصولی معیار

    جب کسی طالبعلم/طالبہ کا رويہ کافی حد تک انتشار انگيز يا پُر تشدد ہو جائے کہ خود اور دوسروں کے لئے يا تعليمی عمل يا سکول کی کاروائيوں ميں مداخلت کا خطرہ پيدا ہونے کا اشارہ دے تو صورت حال کو قابو ميں کرنے کے لئے اور طالبعلم/طالبہ کو خود پر قابو پانے ميں مدد دينے کے لئے مداخلت کے مناسب طريقوں کو استعمال کيا جا سکتا ہے۔ انتشار انگيز طلبا کی جسمانی مداخلت، جسمانی رکاوٹ اور/ يا عليحدگی کو صرف انہی صورتوں ميں استعمال کرنا ہو گا، جو ہنگامی حالات پيدا کرے اور ديگر کم درجہ کے مداخلتی متبادل ممکن نہ ہو يا ناکام ہو جائيں۔ پرنس ولیئم کاونٹی پبلک سکولز ميں جسمانی سزا اورگالی گلوج کے طريقہ کا اختيار، اجازت نہيں ہے اور نہ ہی اس سے چشم پوشی کی جائے گی، اور ان کو ورجينيا کوڈ § -2792.1-22.1 اور سکول بورڈ پاليسی 741 اور ضابطہ 1-741 "جسمانی سزا" ميں واضح طور پر بيان کيا گيا ہے۔
  3. ہنگامی صورتحال میں مداخلت کے طریقے

    مداخلت کے مناسب طریقوں میں درج ذیل شامل ہیں:
    1. ٹائم آؤٹ

      ٹائم آوٹ يا پڑھائی کے ماحول سے اخراج طالبعلم/طالبہ کے انتشار انگيز، جارحانہ، يا پُر تشدد رويہ کو قابو ميں کرنے کے متعدد مداخلتی طريقوں ميں سے ايک کم تر امتناعی طريقہ ہے۔ 'ٹائم آوٹ کا بنيادی مقصد کسی طالبعلم/طالبہ کو پُرسکون کرنے يا اپنے رويہ ميں کمی لانے کے لئے مدد کرنے کے لئے ايک فوری ماحول سے نکال کر ايک مختلف، کھلے مقام پر لا کر اس کو اپنے آپ پر قابو حاصل کرنے ميں مدد کرنا ہے۔ ٹائم آوٹ ميں کلاس رومز ميں، کلاس روم سے باہر ایک حصے ميں جيسے پرنسپل کے دفتر يا سکول کی عمارت کے کسی دوسرے کمرے ميں ٹائم آوٹ شامل ہو سکتا ہے۔

      جب ٹائم آوٹ کو استعمال ميں لايا جائے گا، وہاں پر طالبعلم/طالبہ کی خير و عافيت اور سلامتی سب سے مقدم ہو گی۔ ٹائم آوٹ کے استعمال سے قبل، اگر ممکن ہو تو عملہ کو چاہيے کہ وہ تدریسی ماحول کے اندر بچہ/بچی کو اپنے اوپر قابو پانے يا اپنے رويہ کو درست کرنے ميں مدد دينے کے لئے کم درجہ والے امتناعی اقدامات کو استعمال ميں لائيں۔

      جو طلباء کم درجہ والے امتناعی اقدامات کے استعمال سے اپنے اوپر قابو حاصل کرنے ميں ناکام ہو جائيں، عملہ کو چاہيے کہ وہ ان کو مجہول طريقے سے ٹائم آوٹ مقام کی طرف لے جائيں۔

      جب طلبا کو کسی ايسے مقام پر جہاں کوئی دوسرا موجود نہ ہو، لے جانے کی صورت ميں، ٹائم آوٹ کی ہر ايک مداخلت مختصر وقت کے لئے، ترقی کے لحاظ سے مناسب اور 10 منٹوں سے زيادہ نہيں ہونا چاہيے۔ اگر کوئی طالبعلم/طالبہ ابتدائی 10 منٹوں کے بعد اپنے اوپر قابو حاصل نہ کرے، تو ٹائم آوٹ کے وقت کو مزيد 10 منٹوں تک کے لئے بڑھايا جا سکتا ہے۔

      عملہ کے کم از کم ايک بالغ رکن کو طلبا کا مشاہدہ اور مسلسل طور پر نگرانی کرنی ہو گی۔ ہر ايک ٹائم آوٹ مداخلت کے اختتام پر، عملہ کو طالبعلم/طالبہ کے سيکھنے کے ماحول ميں واپسی کے لئے طالبعلم/طالبہ کے ساتھ مل کر کوشش کرنی ہو گی۔

      اگر ایک طالبعلم/طالبہ کو باقاعدہ ٹائم آؤٹ مداخلت درکار ہو تو سکول کی مداخلتی ٹیم ایک فعالی طرز عمل کی جانچ (FBA) اور فعالی طرزعمل کا مداخلتی منصوبہ (BIP) تیار کرے گی یا اس کا جائزہ لے گی جس میں ڈیٹا کے لیے کسی موجودہ BIP کا جائزہ شامل ہے جو دیانت داری کے ساتھ مثبت طرزعمل کی حمایت کو دستایز کرتا ہے۔

      تمام ٹائم آوٹ کی ٹائم آوٹ لاگ شيٹ (منسلکہ I) پر دستاويز تيار کی جائے گی، اور ٹائم آوٹ کی اطلاع کو پرنسپل يا اس کے نامزد شخص اور والدين/ سرپرستوں کو دينی ہوگی، جيسا کہ اس ضابطہ کے حصہ IV ميں بتايا گيا ہے۔
    2. جسمانی مداخلت

      جسمانی مداخلت ہنگامی صورتحال ميں ظاہر ہونے والے انتشار انگيز، جارحانہ اور متشددانہ رويوں کو قابو ميں کرنے کا ايک زيادہ درجہ والا امتناعی طريقہ ہے۔ خود کو ، دوسروں کو نقصان پہنچانے والا ناگزير خطرہ يا جائيداد کو تباہ کرنے کا ناگزير خطرہ يا تعليمی عمل يا سکول کی کارروائيوں ميں انتشار پيدا کرنے کے خطرہ کی صورت ميں عملہ، صورت حال پر کارروائی کرنے کے ايک مناسب طريقہ کے طور پرجسمانی مداخلت کو استعمال کر سکتا ہے۔ دوسری مداخلتوں کی طرح، جسمانی مداخلت کو بھی ايک ايسے طريقہ پر استعمال کرنا ہوگا کہ طالبعلم/طالبہ، مداخلت کار اور دوسروں کی حفاظتی کو يقينی بنايا جائے۔ جہاں پر دستياب ہو، طلباء اور عملہ کو چوٹ کے امکانات کو کم کرنے کے لئے منظور شدہ جسمانی مداخلتی طريقہ تربيت يافتہ عملہ کو استعمال کيا جائے گا۔ تاہم، جسمانی مداخلت طريقوں کی باضابطہ تربيت کی عدم موجودگی عملے کو صورت حال کے مطابق معقول فيصلہ کرنے سے منع نہيں کرے گی۔

      درج ذيل جسمانی مداخلتوں کے لئے، عملہ کو طالبعلم/طالبہ کے ساتھ اس جسمانی مداخلت کے استعمال کے اسباب پر گفتگو کرنی ہو گی، اور طالبعلم/طالبہ سے اس بات کی درخواست کرنی ہو گی کہ وہ اس جسمانی مداخلت کا تفاضہ کرنے والے رويوں کے مزيد واقع ہونے کے تدارک کے لئے ايک منصوبہ تيار کرنے ميں تعاون کرے۔ اگر کوئی BIP پہلے سے زير عمل ہو تو سکول کی مداخلتی ٹيم کو اس منصوبہ کا معائنہ/نظرثانی کرنی ہو گی۔

      سٹاف کو طالبعلم/طالبہ کے انفرادی تعلیمی پروگرام یا 504 سہولیات کے منصوبے کا جائزہ بھی لینا چاہیے، اگر قابل اطلاق ہے۔

      جسمانی مداخلتوں اور اس کے متعلقہ دستاویزی لاگ ميں شامل تمام واقعات کی پرنسپل/نامزد شخص کو اطلاع اور طالبعلم/طالبہ کے والدين/سرپرستوں کو متعلقہ ضميموں کے ساتھ اطلاع نامہ بھيجنی ہو گی جيسا کہ اس ضابطہ کے سیکشن IV ميں بيان کيا گيا ہے۔
    3. تنہائی (خاموش کمرے کا استعمال)

      چند مخصوص ہنگامی مواقع پر، عملہ طالبعلم کے انتشار انگيز، جارحانہ يا پُر تشدد رويہ کے جواب ميں، تنہائی والے طريقوں کو استعمال کر سکتا ہے، جب کم پابندی والی مداخلتيں ممکن نہ ہو يا ناکام ہو جائيں۔ تنہائی ميں طالبعلم کو ضبط نفس کی بازيابی اور دلجمعی حاصل کرنے کا موقع فراہم کرنے کے لئے ايک خاموش کمرے کا استعمال بھی شامل ہے۔ خاموش کمرے ضبط نفس کی بازيابی کے لئے محفوظ، مامون، کم محرک ماحول کے طور پر استعمال کرنے کے متعينہ علاقے ہيں۔ خاموش کمرے کو استعمال کرتے وقت درج ذيل طريقہ کار پر عمل کرنا ہو گا:
      1. اس بات کے فيصلہ کے موقع پر کہ آيا خاموش کمرے کا استعمال مناسب ہو گا يا نہيں، طالبعلم کی خصوصی ضروريات اور، طالبعلم کے خود کو، دوسروں کو خطرے ميں ڈالنے يا تعليمی کارروائی ميں خلل ڈالنے کے امکانات کو مدنظر رکھنا چاہيے۔ اس بات کے فيصلہ کے موقع پر کہ آيا خاموش کمرے کا استعمال معقول اور مناسب ہے يا نہيں، اہم عوامل جيسے طالبعلم/طالبہ کی ترقياتی عمر، معذوری، صحت کی تشويشات، اور پس منظر کے عناصر اور ساتھ ہی ساتھ طالبعلم/طالبہ، عملہ اور ديگر لوگوں کو درپيش خطرات، جائيداد کے نقصان يا تعليمی کاروائی ميں خلل پر غور کيا جائے۔

        اگر کم درجہ کی پابندی والی مداخلتوں پر غور و خوض کئے جانے کے بعد عملہ اس بات کا تعين کرے کہ ہنگامی صورت حال کو حل کرنے کے لئے خاموش کمرے کا استعمال معقول اور ضروری مداخلت ہے، طالب علم کو بند دروازے والے خاموش کمرے ميں بٹھايا جا سکتا ہے۔
      2. خاموش کمرے کی لاگ شيٹ (منسلکہ I) کو طالبعلم/طالبہ کے سلوک کو ايک منٹ کے وقفہ سے درج کرنے کے لئے استعمال کيا جائے گا۔ طالبعلم کی نگرانی کرنے والا عملہ خاموش کمرے کے دروازے کی کھڑکی کے ذريعہ ميں موجود طالبعلم کے ساتھ بصری رابطہ جاری رکھے گا، جبکہ دورازے کو بند رکھنے کے لئے دروازے کے لاک پر اپنا زور برقرار رکھے گا۔ لاگ شيٹ پر لکھے جانے والے اشارے مشاہداتی رويہ کی عکاسی کريں گے۔ اگر یہ 30 منٹ سے بڑھ جاغے تو دن کے اختتام پرلاگ شيٹ کوپرنسپل/يا نامزد شخص کے پاس معائنہ اور دستخط کے لئے جمع کرایا جائے گا۔
      3. پرسکون کمرہ کسی بھی چیز یا جسمانی خصوصیات سے پاک ہونا چاہیے جو میرے کیس میں طالبعلم کو چوٹ پہنچاتی ہے، کافی روشنی اور وینٹیلیشن کے ساتھ، دروازے کے ذریعے نظر آنے والی تمام جگہوں کے ساتھ، اور ہر وقت بصری طور پر نگرانی کی جاتی ہے۔ دروازے کو ، طالبعلم کی حالت کی مزيد تشخيص کے لئے، 10 منٹوں سے زيادہ وقت کے لئے بند حالت ميں نہيں رہنا چاہيے۔ مذکورہ بالا مرحلہ 1 ميں پيش کردہ عوامل جيسے ترقياتی عمر پرغور کرنے کے لئے 10 منٹ کے وقفہ کو موزوں طور پر ترتيب دينا ہو گا۔ اگر کوئی طالبعلم اپنے رويہ کا مظاہرہ نہ کرے جو اس بات کا اشارہ ہے کہ وہ خاموش اور غيرخطرناک ہے تو دروازے کو بند کرنا ہو گا اور اس عمل کو دوبارہ شروع کرنا ہوگا، جس کے بعد پرنسپل/يا اس کے نامزد شخص کی طرف سے مشاورت کی جائے گی کہ يہ طالب علم دوبارہ ايسے رويہ کا مظاہرہ کر رہا ہے جو دوسروں کے لئے راست خطرہ، جائيداد کے نقصان، تعليمی ماحول کے لئے ناقابل قبول خلل کا اشارہ ديتا ہے۔ خاموش کمرے کو ان خطرات کے ختم ہونے کے فوری بعد کھولنا ہو گا۔ اگر طالبعلم خاموش کمرے ميں رہنے کے دوران اپنے آپ کو نقصان پہنچانے کے رويہ کا مظاہرہ کرے تو عملہ طالب علم کے خود کو زخم پہنچانے کو ختم کرنے کے لئے جسمانی مداخلت کو استعمال کرنے کی ضرورت پر سکتی ہے۔ ان تشخيصات کو لاگ شيٹ ميں واضح طور پر دستاويزی شکل دينی ہو گی۔ اگر کوئی طالب علم نقصان دہ رويہ 30 منٹوں سے زائد معياد کے لئے جاری رکھے تو،عملہ اور پرنسپل /نامزد شخص اور کسی متبادل اقدامی طريقہ، جيسے، والدين کی شموليت، پوليس کا تعاون کے بارے ميں غور کريں۔
      4. طالبعلم کے پُرسکون حالت ميں واپسی کا مظاہرہ کئے جانے کی صورت ميں خاموش کمرے کے دروازے کو کھلی حالت ميں چھوڑنا ہوگا، اور عملہ کو طالبعلم کو خاموش پُرسکون رہنے کی ہدايت دينی ہو گی۔ عملے کی طرف سے متعين کردہ ايک مختصر سے وقفہ(10 منٹوں سے زائد نہ ہو) کی تکميل پر، طالبعلم کو خاموش کمرے سے باہر نکلنے کی ہدايت دی جائے گی، اور اس کو تعليمی ماحول ميں دوبارہ ضم ہونے ميں تعاون ديا جائے گا۔
      5. جب ممکن ہو، عملہ کو طالب علم کے ساتھ خاموش کمرے کے استعمال کے اسباب پر گفتگو کرنی ہو گی اور ايک ترقياتی منصوبے ميں شرکت کرنے کی درخواست کرنی ہو گی، تاکہ خلل انگيز رويہ دوبارہ واقع نہ ہو۔
      6. عليحدگی اور خاموش کمرے پر مشتمل تمام واقعات کی پرنسپل/ نامزد شخص اور طالبعلم کے والدين/ سرپرستوں کو اس ضابطہ کے حصہ IV ميں بتائے ہوئے طريقہ کار اور اس ضابطہ کے متعلقہ ضميمہ کے استعمال کے ذريعہ اطلاع دينی ہو گی۔
  4. اطلاع دينے کی شرائط اور والدين کو مداخلت کی اطلاع
    1. ٹائم آوٹ، جسمانی مداخلت، جسمانی پابندی يا عليحدگی کے استعمال کا سبب بننے والے کسی بھی واقعہ کی تکميل پر استاد یا متعلقہ عملے کے ذریعے ایک طالبعلم/طالبہ کی رپورٹ سٹوڈنٹ انفارمیشن سسٹم میں مکمل کی جائے گی۔ اس قسم کی مداخلت کے واقع ہونے والے تعلیمی دن کے اختتام پر اس رپورٹ کو پرنسپل/ نامزد شخص کے ذريعہ نظر ثانی کے لئے جمع کيا جائے گا۔
    2. استاد اور/یا اسکول کے منتظم کو وقوعہ کے دن والد یا والدہ/سرپرست سے فون یا الیکٹرانک مواصلت کے ذریعے رابطہ کرنے کی معقول کوشش کرنی چاہیے اور والد یا والدہ/سرپرست کو کسی بھی متعلقہ ابتدائی طبی امداد، کارروائیوں یا مداخلتوں سے آگاہ کریں۔
    3. جب کسی بھی طالبعلم کو سکول کے باقاعدہ دن کے بعد جسمانی طور پر روکا یا الگ تھلگ کردیا گیا ہے، تو اس سیکشن کے ذیلی سیکشن A کے ذریعہ مطلوبہ اطلاعات سکول ڈویژن کے سکول کے بحران، ہنگامی انتظام، اور طبی ہنگامی رسپانس پلان کی تعمیل میں جتنی جلدی ممکن ہو کر دی جائیں گی۔
    4. والدين/ سرپرست کو طالبعلم کے مداخلت اور اس کے اسباب کی تحريری اطلاع ضميمہ II کے استعمال کے ذريعہ دی جائے گی۔ تعلیمی دن کے اختتام تک تحريری اطلاع فراہم کرنی ہو گی۔ مداخلت پيش آنے والے تعلیمی دن والدين/سرپرست کوتحريری اطلاع دينے ميں مانع صورت حال سامنے آنے پر، اطلاع کو نيچے " D " ميں بيان کردہ طريقہ کے مطابق اطلاع نامہ کو بذريعہ ڈاک بھيجا جائے گا۔
    5. تحريری اطلاع اور سٹوڈنٹ انفارمیشن رپورٹ کی نقل مداخلت کا سبب بننے والے واقعہ کے پيش آنے کی تاريخ کے زيادہ سے زيادہ دو دن کے اندر والدين کے گھر بذريعہ ڈاک بھيجی جائے گی۔
    6. ہر واقعے کے لیے تمام دستاویزات کو تمام طلباء کے لیے سٹوڈنٹ انفارمیشن سسٹم میں شامل کیا جانا چاہیے۔
    7. والدين/سرپرستوں کو طالبعلم کے رويے، اور اس رويے کے ختم نہ کرنے پر واقع ہونے والے ممکنہ نتائج، اور اس قسم کے رويے کے آئندہ واقع ہونے کی صورت ميں اس پر ردعمل کرنے کے مناسب اقدامات پر بات چيت کرنے کے لئے دو دنوں کے اندر اندر استاد اور سکول منتظم سے ملاقات کرنے کا موقع فراہم کرنا ہو گا۔ والدين/سرپرستوں کے ساتھ واقعہ سے متعلق کسی بھی تحريری اطلاع اور کسی فون يا الیکٹرانک رابطے ميں طالب علم کے رويے، اور اس رويے کے ممکنہ نتائج، اور اس قسم کے رويہ کے آئندہ واقع ہونے کی صورت ميں اس پر ردعمل کرنے کے مناسب اقدامات پر گفتگو کرنے کے لئےوالدين/سرپرستوں کے طالب علم کے استاد اور سکول منتظم سے ملاقات کرنے کے حق کی اطلاع دينی ہوگی۔
  5. اضافی تجاویز

    اس ضابطہ ميں شناخت کردہ مداخلت کے بعد، خصوصاً ايسے موقع پر جب کہ اس قسم کے واقعات کا ايک سلسلہ ہو، اضافی تجاویز ميں درج ذيل شامل ہو سکتے ہيں:
    1. دو دنوں کے اندر اندر مداخلتوں کی اثر انگيزی پر گفتگو کرنے کے لئے عملہ کے ساتھ مشاورتيں؛
    2. طالبعلم کو آئندہ کے مخل واقعات سے روکنے ميں تعاون کے لئے مثبت طرز عمل کی ترقی؛
    3. FBA اور/یا BIP کا نفاذ یا جائزہ، اگر قابل اطلاق ہو؛
    4. انفرادی تعلیمی پروگرام یا 504 سہولیات کے منصوبے کا جائزہ، اگر قابل اطلاق ہے؛
    5. والدين/سرپرستوں اور پرنسپل، استاد اور/يا سکول کانفرنس کے ساتھ کانفرنس (کانفرنسيں)؛ اور
    6. مرکزی دفتر کے تعاون يا وسائل کی درخواست۔
  6. بلڈنگ ایڈمنسٹریٹر ایک سالانہ رپورٹ اور خلوت اور تحمل سے متعلق رویے کی رپورٹ تیار کریں گے اور لیول ایسوسی ایٹ سپرنٹنڈنٹ کے ساتھ شیئر کریں گے۔
  7. عمارت کے منتظمین لیول ایسوسی ایٹ سپرنٹنڈنٹ کو سالانہ اس تاریخ کے بارے میں مطلع کریں گے جب ان کی عمارت کے عملے کو اس ضابطے اور متعلقہ طریقہ کار کے نفاذ میں تربیت دی گئی ہے۔
  8. اصطلاحات:

    "نفرت انگیز محرکات" سے مراد ایسی مداخلتیں ہیں جن کا مقصد طالبعلم کو سزا دینے یا خراب رویوں کو ختم کرنے یا کم کرنے کے مقاصد کے لیے طالبعلم کو درد یا تکلیف پہنچانا ہے، جیسے:
    1. ناگوار بدبو اور ذائقے؛
    2. پانی اور دیگر دھندیں یا سپرے؛
    3. ہوا کے دھماکے؛
    4. جسمانی سزا جیسا کہ ورجینیا کوڈ § 279.1-22.1 میں بیان کیا گیا ہے;
    5. زبانی اور ذہنی زیادتی؛ اور
    6. جبری مشق جب:
      1. طالبعلم کے رویے کا تعلق طالبعلم کی معذوری سے ہے؛
      2. ورزش کا طالبعلم کی صحت پر نقصان دہ اثر پڑے گا؛ یا
      3. طالبعلم کی معذوری ایسی سرگرمیوں میں حصہ لینے سے روکتی ہے۔
    7. ضروریات سے محرومی، بشمول:
      1. ایک وقت میں کھانا اور پینا جو اسے معمول کے مطابق پیش کیا جاتا ہے؛
      2. ادویات؛ یا
      3. بیت الخلاء کا استعمال۔
    "جسمانی سزا" کا مطلب ہے نظم و ضبط کے ذریعے کے طور پر کسی طالبعلم/طالبہ کو جسمانی تکلیف دینا یا جسانی تکلیف کا سبب بننا۔

    "مکینیکل پابندی" کا مطلب ہے کسی بھی مواد، ڈیوائس یا آلات کا استعمال کسی طالبعلم کی نقل و حرکت کی آزادی کو محدود کرنے کے لیے ہے۔ اصطلاح "مکینیکل پابندی" میں وہ آلات شامل نہیں ہیں جو تربیت یافتہ سکول کے عملے کے ذریعہ لاگو کیے گئے ہیں یا کسی طالبعلم کے ذریعہ استعمال کیے گئے ہیں جو کسی مناسب طبی یا متعلقہ سروس پروفیشنل کے ذریعہ تجویز کیے گئے ہیں اور والدین کی رضامندی سے اور مخصوص اور منظور شدہ مقاصد کے لیے استعمال کیے گئے ہیں جن کے لیے ایسے آلات استعمال کیے گئے ہیں۔ ڈیزائن کیا گیا تھا، جیسے:
    1. انڈیپٹیو ڈیوائسز یا مکینیکل سپورٹ جسم کی مناسب پوزیشن، توازن، یا سیدھ کو حاصل کرنے کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں تاکہ نقل و حرکت کی زیادہ آزادی کی اجازت دی جا سکے جو اس طرح کے آلات یا مکینیکل سپورٹ کے استعمال کے بغیر ممکن ہو گی۔
    2. گاڑیوں کی پابندیاں، بشمول سیٹ بیلٹ، جب چلتی گاڑی میں طالبعلم کی نقل و حمل کے دوران استعمال کیا جاتا ہے؛
    3. طبی عدم استحکام کے لیے پابندیاں؛
    4. آرتھوپیڈک طور پر تجویز کردہ آلات جو طالب علم کو نقصان کے خطرے کے بغیر سرگرمیوں میں حصہ لینے کی اجازت دیتے ہیں؛ یا
    5. ہائی کرسیاں اور کھانا کھلانے کے سٹیشن جو عمر یا ترقی کے لحاظ سے موزوں طلباء کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔
    "فارماکولوجیکل پابندی" کا مطلب ہے کہ طالبعلم پر رویے کو کنٹرول کرنے یا نقل و حرکت کی آزادی کو محدود کرنے کے لیے استعمال ہونے والی دوائی یا دوائیں جو کہ درج ذیل نہیں ہیں:
    1. کسی طالبعلم کی طبی یا نفسیاتی حالت کے معیاری علاج کے لیے پیشہ ورانہ اتھارٹی کے دائرہ کار کے تحت لائسنس یافتہ ڈاکٹر یا دیگر اہل صحت پیشہ ور کے ذریعہ تجویز کردہ؛ اور
    2. لائسنس یافتہ ڈاکٹر یا پیشہ ور کے اختیار کے دائرہ کار کے تحت کام کرنے والے دیگر اہل صحت پیشہ ور کے ذریعہ تجویز کردہ انتظام۔
    "جسمانی پابندی" کا مطلب ہے ایک ذاتی پابندی جو طالبعلم کی آزادانہ نقل و حرکت کی صلاحیت کو متحرک یا کم کر دیتی ہے۔ اصطلاح "جسمانی پابندی" میں درج ذیل شامل نہیں ہے:
    1. کسی طالبعلم/طالبہ کو خاموش کرانے يا آرام پہنچانے کے لئے پکڑنا؛
    2. کسی طالبعلم/طالبہ کو محفوظ طور پر ايک مقام سے دوسرے مقام تک لے جانے طالبعلم/طالبہ کا ہاتھ یا بازو پکڑنا; یا
    3. تنظیم اور کنٹرول برقرار رکھنے کیلیئے حادثاتی، معمولی یا مناسب جسمانی چھونا یا کی گئی دیگر کاروائیوں کا استعمال۔
    "پابندی" کا مطلب ہے مکینیکل پابندی، جسمانی پابندی، یا فارماسولوجیکل پابندی۔

    "تنہائی" کا مطلب کسی طالبعلم/طالبہ کو ايک کمرے یا حصے ميں اکيلا قيد کرنا شامل ہے جہاں سے طالبعلم/طالبہ کو جسمانی طور پر باہر نکلنے ميں پابندی عائد ہو۔ بشرطیکہ ایسا کوئی کمرہ یا جگہ مقفل نہ ہو، اصطلاح "تنہائی" میں درج ذیل شامل نہیں ہے:
    1. ٹائم آؤٹ، جیسا کہ اس باب میں بیان کیا گیا ہے؛
    2. سکول کے اندر معطلی؛
    3. نظربندی؛
    4. طالبعلم کی طرف سے درخواست کردہ وقفے کمرے میں یا الگ کمرے میں کسی مختلف جگہ پر؛
    5. طالبعلم کو کمرے سے مختصر مدت کے لیے ہٹانا یا کمرے کے الگ علاقے سے طالبعلم کو دوبارہ خود پر قابو پانے کا موقع فراہم کرنا، جب تک کہ طالبعلم ایسی ترتیب میں ہو جہاں سے طالبعلم کو جسمانی طور پر چھوڑنے سے روکا نہ گیا ہو؛
    6. استاد کی طرف سے کلاس روم سے خلل ڈالنے والے رویے کے لیے طالب علم کو ہٹانا جیسا کہ ورجینیا کوڈ کا § 276.2-22.1 میں فراہم کیا گیا ہے؛ یا
    7. طالب علم کو اکیلے کمرے یا علاقے میں قید کرنا جہاں سے طالب علم کو جسمانی طور پر اسکول کے عملے کے ذریعہ طالب علم کے علم یا ان واقعات میں شرکت کے بارے میں تفتیش اور پوچھ گچھ کے دوران جانے سے روکا جاتا ہے جو طالب علم کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا باعث بنتا ہے، جیسے کسی جسمانی جھگڑے کے طور پر، یا منشیات یا ہتھیاروں سے تعلق رکھنے والا واقعہ۔
    "ٹائم آؤٹ" کا مطلب ایک طرز عمل کی مداخلت ہے جس میں طالبعلم کو عارضی طور پر سیکھنے کی سرگرمی سے ہٹا دیا جاتا ہے لیکن جس میں طالبعلم کو قید نہیں کیا جاتا ہے۔

    "رویے کی مداخلت کا منصوبہ" یا "BIP" کا مطلب ایک ایسا منصوبہ ہے جو مثبت رویے کی مداخلتوں کو استعمال کرتا ہے اور حل کرنے میں مدد کرتا ہے:
    1. ایسے رویے جو طالب علم کے سیکھنے یا دوسروں کے سیکھنے میں مداخلت کرتے ہیں؛ یا
    2. ایسے رویے جن کے لیے تادیبی کاروائی کی ضرورت ہوتی ہے۔
    "کاروباری دن" سے مراد پیر تا جمعہ، سال کے 12 مہینے، وفاقی اور ریاستی تعطیلات کے علاوہ (الّا یہ کہ جب تک کہ تعطیلات خاص طور پر کاروباری دنوں میں شامل نہ ہوں)۔

    "تقویمی دن" سے مراد مسلسل دن، بشمول ہفتہ اور اتوار۔ جب بھی اس باب کے ذریعہ مقرر کردہ وقت کی کوئی مدت ہفتہ، اتوار، وفاقی تعطیل، یا ریاستی تعطیل پر ختم ہوتی ہے، ایسی کاروائی کرنے کے لیے وقت کی مدت اگلے دن تک بڑھا دی جائے گی جو ہفتہ، اتوار، وفاقی تعطیل یا سرکاری چھٹی نہیں ہے۔

    "معذور بچہ" یا "معذور طالبعلم" کا مطلب ہے پبلک ایلیمنٹری یا سیکنڈری سکول کا طالبعلم جس کی تعریف 8VAC20-81 کے طور پر کی گئی ہے:
    1. ایک ذہنی معذوری؛
    2. سماعت کی خرابی (بشمول بہرا پن)؛
    3. سپیچ یا لینگوئج یعنی بولنے یا کی خرابی؛
    4. بصری خرابی بشمول نابینا پن؛
    5. ایک سنگین جذباتی معذوری (جسے 8VAC20-81 میں بیان کیا گیا ہے جیسے ایک جذباتی معذوری؛
    6. ایک آرتھوپیڈک خرابی؛
    7. آٹزم [ایک نفسیاتی بیماری جس میں مریض بچگانہ خیالی دنیا میں رہتا ہے]؛
    8. شدید دماغی چوٹ؛
    9. صحت کی دیگر خرابیاں؛
    10. تدریس کی خصوصی معذوری؛
    11. بہرا اندھا پن؛ یا
    12. متعدد معذوریاں جنہیں، اس کی وجہ سے، خصوصی تعلیم اور متعلقہ خدمات کی ضرورت ہوتی ہے۔
    اس میں نشوونما میں تاخیر بھی شامل ہے اگر سکول ڈویژن اسے 8VAC20-81-80 M 3 کے تحت اس زمرے میں ایک معذوری کے طور پر شناخت کرتی ہے۔ اگر مناسب تشخیص کے ذریعے اس بات کا تعین ہوتا ہے کہ بچہ/بچی کو جو معذوری تشخیص کی گئی ہے اس کے لیے صرف متعلقہ خدمات درکار ہیں اور خصوصی تعلیم نہیں، تو 8VAC20-81 کے تحت وہ بچہ/بچی معذور بچہ/بچی نہیں ہو گا۔ اگر ورجینیا معیارات کے تحت بچہ/بچی کو درکار متعلقہ خدمات خصوصی تعلیم کی سمجھی جاتی ہیں بجائے متعلقہ خدمات سمجھنے کے تو بچہ/بچی کو معذور بچہ/بچی سمجھا جائے گا۔ جیسا کہ اس باب میں استعمال کیا گیا ہے، معذوری کے زمرے جو اس تعریف اور اصطلاحات "خصوصی تعلیم" اور "متعلقہ خدمات" میں بیان کیے گئے ہیں۔

    "دن" کا مطلب تقویمی دن ہے جب تک کہ دوسری صورت میں کاروباری دن یا تعلیمی کے دن کے طور پر نامزد نہ کیا جائے۔

    تشخیص سے مراد وہ طریقے جو 8VAC20-81 کی مطابقت میں استعمال کیے جاتے ہیں تاکہ اس بات کا تعین ہو کہ آیا بچہ/بچی معذور ہے یا نہیں اور خصوصی تعلیم اور متعلقہ خدمات کی نوعیت اور وسعت کا تعین کیا جائے جس کی بچہ/بچی کو ضرورت ہے۔

    "فعالی عمل کی جانچ" یا FBA سے مراد وہ عمل ہے جو طالبعلم/طالبہ کے طرز عمل کی بنیادی وجہ یا مقصد کے تعین کا عمل کرتا ہے جو طالبعلم/طالبہ کی تدریس یا طالبعلم/طالبہ کے ساتھیوں کی تدریس میں رکاوٹ بنتا ہے۔ ایک فعال طرز عمل کی تشخیص میں موجودہ ڈیٹا یا نئے ٹیسٹنگ ڈیٹا کا جائزہ یا تشخیص شامل ہو سکتا ہے جیسا کہ 8VAC20-750-70 میں بیان کیا گیا ہے۔

    "انفرادی تعلیمی پروگرام" یا "IEP" کا مطلب معذور بچے کے لیے ایک تحریری بیان ہے جو ورجینیا میں معذور بچوں کے لیے خصوصی تعلیم کے پروگرام کے ضوابط کے مطابق تیار کیا جاتا ہے، اس کا جائزہ لیا جاتا ہے اور کم از کم سالانہ ٹیم میٹنگ میں نظر ثانی کی جاتی ہے (8VAC20-81)۔ IEP بچہ/بچی کی انفرادی تعلیمی ضروریات کو بیان کرتی ہے اور بچہ/بچی کی تعلیمی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے کون سی مخصوص تعلیم اور متعلقہ خدمات درکار ہیں۔

    "انفرادی تعلیمی پروگرام کی ٹیم" یا "IEP ٹیم" کا مطلب ہے 8VAC20-81-110 میں بیان کردہ افراد کا ایک گروپ جو معذور بچے کے لیے IEP کو تیار کرنے، اس کا جائزہ لینے یا اس پر نظر ثانی کرنے کا ذمہ دار ہے۔

    "تعلیمی دن" سے مراد کوئی دن، بشمول جزوی دن، جب بچے تدریسی مقاصد کے لیے سکول میں حاضر ہوتے ہیں۔ اس اصطلاح سے مراد سکول میں معذور اور بغیر معذوری والے تمام طلباء شامل ہیں۔

    "سکول کے عملے" سے مراد وہ افراد ہیں جو سکول ڈویژن کے ذریعہ کل وقتی یا جز وقتی بنیادوں پر یا خود مختار ٹھیکیداروں یا ذیلی ٹھیکیداروں کے بطور تدریسی، انتظامی، اور معاون عملے کے طور پر کام کرتے ہیں اور ان میں ایسے افراد شامل ہیں جو سکول کے مناسب عملے کی نگرانی میں طالبعلم کے استاد یا انٹرن کے طور پر خدمات انجام دیتے ہیں۔

    "سیکشن 504 پلان" کا مطلب 1973 کے بحالی ایکٹ کے سیکشن 504 کے تحت ترمیم اور سہولیات کا تحریری منصوبہ ہے (29 USC § 794

    "طالبعلم/طالبہ" کا مطلب ہے کوئی بھی طالبعلم/طالبہ، معذوری کے ساتھ یا اس کے بغیر، پبلک ایلیمنٹری یا سیکنڈری سکول میں داخل ہے جیسا کہ ورجینیا کوڈ کا § 11-22.1 میں بیان کیا گیا ہے۔

ایسوسی ایٹ سپرنٹنڈنٹ برائے خصوصی تعلیم اور سٹوڈنٹس سروسز (یا نامزد کردہ) اس ضابطہ کی نگرانی اور نفاذ کے ذمہ دار ہیں۔

اس ضابطے اور متعلقہ پالیسی کا ہر سال جائزہ لیا جائے گا اور ضرورت کے مطابق دہرایا جائے گا۔

منسلکہ I کے PDF ورژن کے لیے یہاں کلک کریں

منسلکہ II کے PDF ورژن کے لیے یہاں کلک کریں